Posts

Showing posts from 2018

مداری سلسلہ

*مداری سلسلہ  
حضورزندشاہ مدارقدس سرہ کا*  *601واں* *عرس سراپاقدس*   *بمقام آستانئہ عالیہ مداریہ دارالنور مکن پورشریف ضلع کانپورنگریوپی انڈیا*  حضورزندہ شاہ مدارقدس سرہ کا اصلی نام "احمد"اورلقب بدیع الدین ہے نیز مدارالعٰلمین، زندہ شاہ مدار،قطب المدار ،شاہ مدار ،مداراعظم ،مدارپاک ،وغیرہ بھی آپکےالقابات میں سےہیں  آپکی ولادت سن 242 ھجری بروزپیر یکم شوال المکرم یعنی عیدکےدن ملک شام کےشہرحلب میں ہوئی  آپکےوالدگرامی حضرت قاضی سیدقدوة الدین علی حلبی اوروالدہ ماجدہ حضرت سیدہ بی بی فاطمہ ثانیہ تبریزیہ  ہیں  آپ نسباً حسنی حسینی یعنی نجیب الطرفین سیدآل رسول ہیں آپکو شرف بیعت واجازت وخلافت سلطان العارفین حضرت سیدنا بایزیدبسطامی عرف طیفورشامی قدس سرہ النورانی سے سن 259ھجری بعدنمازمغرب خاص بیت المقدس کےاندرحاصل ہوا نیز انکے علاوہ اوربھی چارطریقوں سےآپکواجازت وخلافت حاصل ہے گویاکہ ملک العارفین حضرت سیدنا  مدارپاک قدس سرہ کو پانچ طریقوں سےواجازت وخلافت حاصل ھے مورخین نے انھیں حسب ذیل ناموں سےیادکیا ھے  1 جعفریہ مداریہ  2 طیفوریہ مداریہ 3 صدیقیہ مداریہ   4 مہدویہ مداریہ  5 اویسیہ مداریہ  …
601 واں عرس حضور زندہ شاہ مداراختتام پذیر
ــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
✍🏻قیصرمداری کی رپورٹ ـــــــــــــــــــــــــــــــــــــــ
601 واں عرس زندہ شاہ مدارکی مخصوص تقریبات 17/16/15 جمادی الاولیٰ سن 1439ھ  مطابق 4/3/2/فروری سن 2018 عـ بروز جمعہ سنیچراتوار  خانقاہ عالیہ مداریہ دارالنورمکنپورشریف ضلع کانپورنگریوپی انڈیا میں منعقدہوئیں پہلےدن سےہی مدارپاک کےدیوانوں کی ٹولیاں جوق درجوق ملک کےگوشےگوشےسے آناشروع ہوگئیں اورمکن پورشریف کاہرپیرخانہ معتقدین ومریدین  سےبھرگیا عرس پاک کی پہلی شب میں جلسۂ عیدمیلادالنبی صلی اللہ تعالیٰ علیہ وآلہ وسلم کاانعقادہواجسمیں مکن پورشریف اور باہرسےآنےوالے علماءوشعراءنے اپنی عقیدتوں کاخراج پیش کیا اس شب میں خصوصی خطاب امیرالقلم شھزادۂ رسول حضرت علامہ سیدازبرعلی جعفری مداری نےفرمایا علامہ موصوف نےصحیح معنوں میں جوپیغام پہونچاناچاہئےوہ پیغام  پہونچایا حضورامیرالقلم کےخطاب کےبعد صلوٰةوسلام ودعاءپرجلسےکااختتام ہوا عرس مقدس کےدوسرےدن مکن پورشریف کی ہرگلی انسانوں سےبھرگئی ہرطرف سےدم مداربیڑاپار کی گونج سنائی دینےلگی علماءوفضلاءوصوفیاء بھی جوق درجوق آ…
Shah Madar completed his travel in Makanpur near Kannauj in 1397 AD and settled down there for 20 years. He passed away in 1417 AD. He was buried at Makanpur and a tomb was erected by King Ibrahim Sharki of Jaunpur in 1418 AD where thousand if devotees visit the Mazar offering their prayer and they get the blessings of the Sufi saint. During Mughal empire Akbar, Shahjahan and Alamgir carried out the construction work of Dargah Sharif. At the end of his life Shah Madar handed over his spiritual seat to his nephew Khwaja Mohammed Argoon. Sayyed Mohammed Mujeebul Baqi and his son Sayyed Mohammed Zafer Mujeeb have 16th genealogical record from Shah Madar and they are the chief Sajjadah Nashin of the Khankah-e-Madaria where an annual urs is celebrated with great fervor and gaiety on every 15th, 16th, 17th of Arabic lunar month Jamaid-ul-Awwal of Hizri year where lacs of people gather from all over the world to pay their homage to the great sufi saint Shah Madar for getting his blessings.